Friday, 21 August 2009

روزہ کن چیزوں سے باطل ہوتا ہے کا بیان

0 comments
مبطلات روزہ دس چیزیں ہے مسئلہ

اول: کھانا.

٢۔ پینا.

٣۔ جماع کرنا.

٤۔ بنابر احتیاط خدا و رسول اور ائمہ علیہم السلام کی طرف جھوٹی نسبت دینا اور احوط کی بنا پر بلکہ بنا بر اقویٰ حضرت فاطمہ زہراۖ بھی ائمہ اطہار کے ساتھ ملحق ہیں لیکن یہ جب جانتے ہوئے عمداً جھوٹی نسبت دے پس اگر جھوٹ ہونا معلوم نہ ہو یا سہواً جھوٹی نسبت دے دے تو اس صورت میں روزہ باطل نہیں ہوتا۔

٥۔ جان بوجھ کر طلوع فجر تک جنابت پر باقی رہنااسی طرح حیض و نفاس اور استحاضہپر باقی رہنا۔

٦۔ غسل ارتماسی یعنی سر کو پانی میں ڈبونا۔

٧۔ حلق میں غبار غلیظ اور دھواں پہنچانا پس اگر حلق میں پہنچ کر بلغم نکل جائے تو اس صورت میں روزہ باطل ہے، جہاں سے نقطہ خ نکلتا ہے اسی کو حلق کہتے ہیں۔

٨۔ الٹی کرنا.

٩۔ استمنائ.


۔١٠ کسی بہنے والی چیزپچکاری کرنا لیکن اگر کوئی بہنے والی چیز نہیں ہے اور اس سے پچکاری کرے تو روزہ باطل نہیں ہے لیکن مکروہ ہے۔

مسئلہ:
یہ مبطلات جن کا ذکر ہوا ہے اس وقت روزہ کو باطل کردیتے ہیں اگر عمداً استعمال کرے لیکن اگر سہواً ہو تو روزہ باطل نہیں ہوتا۔

مسئلہ:
یہ مبطلات جو ذکر ہوئے ہیں بعض کی وجہ سے صرف قضا واجب ہوتی ہے کفارہ واجب نہیں ہے جیسے غسل ارتماسی کرنا، قی کرنا اس صورت میں کہ کوئی چیز حلق میں نہ پہنچی ہو یا بے اختیار حلق میںپہنچی ہو پس اگر اختیار کے ساتھ عمداً کوئی چیز حلق میں پہنچائے تو قضا کے ساتھ کفارہ بھی واجب ہوجائے گا. اسی طرح اول وقت میں افطار کرنا یا آخری وقت میں کوئی چیز کھانا رات ہونے کے گمان سیلیکن بعد میں معلوم ہوا کہ دن ہے پس اگر کوئی عمداً اور اختیار کے ساتھ دن ہونے گمان سے کوئی مبطلات انجام دے تو قضا اور کفارہ دونوں واجب ہوجائے گا۔

0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔