Thursday, 27 August 2009

امریکی ریاست مشی گن میں مسلمان خاتون نے اسکارف اتارنے کا حکم دینے پر جج کے خلاف مقدمہ دائر کردیا۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عراقی نڑاد امریکی خ

0 comments
امریکی ریاست مشی گن میں مسلمان خاتون نے اسکارف اتارنے کا حکم دینے پر جج کے خلاف مقدمہ دائر کردیا۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عراقی نڑاد امریکی خاتون رانین البغدادی نے وین کاوٴنٹی کے جج ولیم کلاہن کے خلاف مقدمے میں موقف اختیار کیا ہے کہ مذکورہ جج نے ان کے آئینی حق کو پامال کرتے ہوئے انہیں کمرہ عدالت میں اسکارف اتارنے کا حکم دیا۔ مشی گن میں کونسل آن امیریکن اسلامک ریلیشنز کے ہیڈکوارٹر میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے رانین کا کہنا تھا کہ مذہبی احکامات کی پابندی ان کا آئینی حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکا آزادی کا علمبردار ملک ہے اور یہاں مسلمان خواتین کے ساتھ ایسا سلوک نہیں ہونا چاہئیے۔دوسری جانب عدالت کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ جج کلاہن تمام مذہبی روایات کا احترام کرتے ہیں اور اگر انہیں اسکارف کی مذہبی اہمیت کا علم ہوتا تو رانین کو سماعت کے دوران اسکارف پہننے کی اجازت دے دیتے۔واضح رہے کہ رانین البغدادی کی جانب سے دائر مقدمے میں وفاقی جج سے استدعا کی گئی ہے کہ وہ وین کاوٴنٹی کے ججوں کو دوران سماعت مسلمان خواتین کوحجاب پہننے کی اجازت دینے کا پابند بنائیں۔

0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔