Tuesday, 1 September 2009

شیعہ عالم

0 comments
مولانا ثنا اللہ امرتسری رحمہ اللہ کے بارے میں آتا ھے کہ ان کو کسی مشہور شیعہ عالم نے مناطرے کی دعوت دی- مولانا بڑے پائے کے عالم تھے،اللہ نے علم کے ساتھ ساتھ دانائی بھی عطا کی تھی -
جب مطلوبہ دن آیا تو شیعہ اور سنی مسلمانوں کے ساتھ بنڈال بھرا ہوا تھا-شیعہ عالم ابنی جماعت کے ساتھ پہنچ چکے ھے لیکن مولانا کا کہیں دُور دُور تک پتہ نہ تھا- مولانا کے نا آنے کی صورت میں شیعہ عالم کی کامیابی تھی-
کافی انتظار کے بعد مولانا اس حالات میں تشریف لائے کہ ان کے جوتے بغل میں تھے -یہ دیکھ کرروافض ہنسنے لگے اور آپس میں کہا کہ یہ سنی عالم ھے-
اورپوچھا مولانا آپ نے یہ جوتے بغل میں کیوں لے رکھیں ھیں ،مولانا نے جواب دیا کہ محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے دور میں شیعہ جوتے چوری کر لیتے تھے ،اس لیے میں اپنے جوتے ساتھ لایا ھوں،شیعہ عالم جھٹ بولا کہ تم جھوٹ بولت ہو اس دور میں شیعہ نہیں تھے ،مولانا نے کہا کہ اچھا! اب کہاں سے آگئے۔

0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔